جمعرات , 27 جولائی 2017

Home » تحقیق و جستجو » اسلام میں َعلمَ کا تصور :

اسلام میں َعلمَ کا تصور :

اسلام میں واضح طور پر َعلمَ کا تصور پیش کیا اس کی صحیح قدر و قیمت سے آگاہ کیا خالق کائنات کا علم دیا۔
تمام علم کا سر چشمہ الله تعالی کی ذات کو قرار دیا اس نے ہم کو کائنات اور اس میں موجود اشیا کا علم دیا۔
علم کا تعلق مقاصد حیات اور لوازمات حیات دونوں سے ہوتا ہے۔ جب کہ وحی حصول علم کا سب سے اعلی
ذریعہ یہ انبیاء کرام کے توسط سے انسانوں تک پہنچتا ہے۔ توریت ، زبور انجیل اور قرآن مجید آسمانی
کتابیں ہیں۔۔
علم تعلیم کی آہمیت کا اندازہ قرآن کی پہلی آیت مبارکہ سے لگایا جا سکتا ہے جو یعنی سب سے پہلی وحی جو
حضوراکرم پ نازل ہوئی وہ َ اقرا َ تھی۔ جس کے معنی ہیں:
َ پڑھیے اپنے رب کے نام کے ساتھہ جس نے پیدا کیا۔ جس نے قلم کے ذریعے علم سکھایا اور
انسان کو وہ علم دیا جسے وہ جانتا نہ تھا َ۔
( سورہ العلق ٥٣)
سب سے پہلے الله تعالی نے حضرت آدم کو علم سے نوازا اسی کی بدولت انسان کو فرشتوں پر فضیلت حاصل
ہوئی۔
ترجمہ : اور الله نے آڈم ک ساریی چیزوں کے نام سکھائے َ ( البقر ٣١ )
حضرت آدم کو ساری چچیزوں کے نام سکھائےگویا ان کو کائئنات کی چیزیں کا علم دینا تھا۔تاکہ وہ علم
آنے والی نسلوں میں ھھی منتقل ہوتا رہے۔ انساانی چیزوں کے ناموں کی وجہ سے ہی معلومات کو ذہن نشین
کرتتا ہے اس آیت کریمہ سے عمل و دانش کی فضیت ظاہر ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ قرآن پاک میں علم کی اہمیت
کے سلسلے می بھی متعدد آیتیں ملتی ہیں جن میں سسے اھم کا ترجمہ درج ذیل ہیں :-
سورہ الزمر کی آیت نمر ٩کا ترجمہ:
اے پیغمبر کہہ دیجئے کہ اہل علم اور جاہل لوگ برابر ہوو سککتے ہیں-
سورہ النحل آیت نمبر ٤٣کا ترجمہ
گر تم کو علم نہ ہوو تو اہل علم سے پوچھ لیا کرو
مندرجہ بالا آیتوں کے ترجمہ کے مطالعہ سے اسلام میں علم کی اھمیت کا تصور واضح ہوتا ہے ضرورت اس
امر کی ہے کہ آنے والی نسلیں بھ اسلام کی اہمیت کوو سممجھیں ار اس پر عمل پیرا ہوں۔

اسلام میں َعلمَ کا تصور : Reviewed by on . اسلام میں واضح طور پر َعلمَ کا تصور پیش کیا اس کی صحیح قدر و قیمت سے آگاہ کیا خالق کائنات کا علم دیا۔ تمام علم کا سر چشمہ الله تعالی کی ذات کو قرار دیا اس نے ہم اسلام میں واضح طور پر َعلمَ کا تصور پیش کیا اس کی صحیح قدر و قیمت سے آگاہ کیا خالق کائنات کا علم دیا۔ تمام علم کا سر چشمہ الله تعالی کی ذات کو قرار دیا اس نے ہم Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top