بدھ , 18 اکتوبر 2017

Home » اہم » انسانی تاریخ کی ٥ مہلک ترین بیماریاں:

انسانی تاریخ کی ٥ مہلک ترین بیماریاں:

انسانی تاریخ میں یہ قیاس کیا جاتا ہے کہ انسان کی سب سے زیادہ جان انسان نے ہی لی ہے لیکن حقیقت ایسی نہیں ہے۔ تاریخ میں انسان کی سب سے زیادہ جان مہلک بیماریوں نے لی ہے۔ہم آپ کو بتاتے ہیں ایسی 5 بیماریاں جو انسان کیلئے مہلک ترین ثابت ہوئیں
1 ملیریا:
مچھر کے سبب پیدا ہونے والی اس بیماری میں بخار اور سردرد شامل ہوتا ہے اور معاملہ اگر زیادہ سنجیدہ ہوجائے تو کوما یا موت بھی واقع ہوسکتی ہے۔ شروع شروع یہ ٹروپکس میں ہوتا تھا اور اب بھی وہ کوئی مؤثر ویکسینیشن نہیں ہے۔
2 سارس:
آخری بار جون 2003میں پھوٹنے والی سانس کی وائرل بیماری، جس کے متعلق ابھی بھی مکمل طور پر ختم ہوجانے کا دعویٰ نہیں کیا جاتا۔ تاہم یہ بیماری اب بھی جانوروں میں پائی جاتی ہے۔
3 پھیپڑوں کا کینسر:
دنیا بھر میں مردوں اور عورتوں کی موت کا ایک عام سبب پھیپڑوں کا کینسر ہے۔ ہر سال اس بیماری سے 13لاکھ 80ہزار اموات ہوتی ہیں۔
4 ڈائریا:
تیسری دنیا کے ممالک میں اموات کی سب سے عام اور دنیا بھر میں بچوں کی اموات کا دوسرا عام سبب ڈائریا ہے۔
5 ٹیوبر کلوسس(ٹی بی):
پھیپڑوں پر حملہ آور یہ بیماری تھوک پھینکنے سے پھیلتی ہے۔ ٹی بی کی علامات میں مستقل کھانسی اور اس کے ساتھ بلغم میں خون آنا، بخار، رات میں پسینہ آنا اور وزن کا گھٹناہے۔ آج ایک اندازے کے مطابق قریب قریب ایک تہائی دنیا کسی نہ کسی قسم کے ٹی بی میں مبتلا ہے۔

انسانی تاریخ کی ٥ مہلک ترین بیماریاں: Reviewed by on . انسانی تاریخ میں یہ قیاس کیا جاتا ہے کہ انسان کی سب سے زیادہ جان انسان نے ہی لی ہے لیکن حقیقت ایسی نہیں ہے۔ تاریخ میں انسان کی سب سے زیادہ جان مہلک بیماریوں نے انسانی تاریخ میں یہ قیاس کیا جاتا ہے کہ انسان کی سب سے زیادہ جان انسان نے ہی لی ہے لیکن حقیقت ایسی نہیں ہے۔ تاریخ میں انسان کی سب سے زیادہ جان مہلک بیماریوں نے Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top