ہفتہ , 21 اکتوبر 2017

Home » انٹرٹینمنٹ » بالی ووڈ میں پابندی کاشکارپاکستانی فنکارمستقبل بچانے کیلیے سرگرم عمل:

بالی ووڈ میں پابندی کاشکارپاکستانی فنکارمستقبل بچانے کیلیے سرگرم عمل:

لوٹ کے بھدو گھر کو آئے، یہ روایت تو ہمارے ان فنکاروں پر لاگو ہوتی ہے جو شہرت اور پیسے کمانے کی خاطر بھارت گئے اور وہاں بالی وڈ کے فلموں میں کام کیا اور وہاں خوب نام اور شہرت حاصل کی مگر حالیہ پاک بھارت کشیدگی کے بعد انھوں اپنا کیرئیر بچانے کے لئیے پاکستان کے انڈسٹری کا ہی سہارا لینا پڑ رہا ہے.تفصیلات کے مطابق بالی ووڈ فلموں میں کاسٹ ہونے والے فنکاروں نے پاکستانی پروڈیوسرز اور ہدایتکاروں کو نخرے دکھاتے ہوئے من مانی شرائط اور منہ مانگا معاوضہ طلب کرنے لگے تھے۔اس پر پروجیکٹس کے لیے پروڈیوسرز اور ہدایتکاروں نے زیر غور لانا ہی چھوڑ دیا تھا۔ پاک بھارت کشیدگی کے باعث ممبئی فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن نے بالی ووڈ فلموں میں پاکستانی فنکاراور تکنیکی اسٹاف پر پابندی لگا دی جب کہ زیرتکمیل پروجیکٹس سے انھیں فارغ کردیا گیا ہے۔ اداکار ہ ماہرہ خان کی ’’رئیس‘‘ ، فواد خان اور عمران عباس کی ’’ اے دل ہے مشکل‘‘ نمائش کے لیے بالکل تیار ہیں جب کہ اداکارہ سجل علی اور عدنان صدیقی بونی کپور کی ہوم پروڈکشن فلم ’’مام ‘‘ اور اداکارہ صبا قمر فلم ’’ہندی میم‘‘ میں عرفان خان کے مقابل کاسٹ ہوئی ہیں ۔ممبئی فلم پروڈیوسر ایسوسی ایشن کی طرف سے پاکستانی فنکاروں اورتکنیکاروں کے بولی وڈ میں کام کرنے پر پابندی اور انتہا پسند ہندئووں تنظیموں کی طرف سے شدید احتجاج پر ان فلموں کے پروڈیوسرز پریشانی میں مبتلا ہوگئے ہیں۔
معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ فنکاروں نے پاکستانی شوبز انڈسٹری میں دوبارہ سے ان ہونے کے لیے پروڈیوسرز اور ہدایتکاروں سے رابطے شروع کردیے ہیں۔سنجیدہ حلقوں کا کہنا ہے کہ پاکستانی فنکار بالی ووڈ کا حصہ بنتے ہی ہوم گراونڈ کے لیے نولفٹ کا بورڈ لگا دیتے ہیں جس نے اسے اس مقام تک پہنچایا ہوتا ہے۔واضح رہے اداکارہ وینا ملک ، عمران عباس، سارہ لورین، عمائمہ ملک بالی ووڈ میں وہ کامیابی حاصل نہیں کرسکے جوشہرت اورعزت پاکستانی شوبز انڈسٹری نے انھیں دی ۔

بالی ووڈ میں پابندی کاشکارپاکستانی فنکارمستقبل بچانے کیلیے سرگرم عمل: Reviewed by on . لوٹ کے بھدو گھر کو آئے، یہ روایت تو ہمارے ان فنکاروں پر لاگو ہوتی ہے جو شہرت اور پیسے کمانے کی خاطر بھارت گئے اور وہاں بالی وڈ کے فلموں میں کام کیا اور وہاں خوب لوٹ کے بھدو گھر کو آئے، یہ روایت تو ہمارے ان فنکاروں پر لاگو ہوتی ہے جو شہرت اور پیسے کمانے کی خاطر بھارت گئے اور وہاں بالی وڈ کے فلموں میں کام کیا اور وہاں خوب Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top