ہفتہ , 21 اکتوبر 2017

Home » تاریخ کے جھروکے سے » حورم سلطان

حورم سلطان

شاہِ سلیمان جس کی سلطنت تین براعظموں پر پھیلی هوئي تھی اس کے دل اور دماغ پر ایک روسی کنیز روکسے لانا کا قبضہ تھا جس کو بعد میں دنیا حورم سلطان کے نام سے یاد کرتی تھی۔
وه ایک تاتاری بردہ فروش سے خریدی ہوئی روسی کنیز تھی۔ و ہ ایک سخت ، مضبوط قوتِ ارادی کی مالک اور شاطر عورت تھی۔ هوا کے رخ کو پہچاننے کی خداداد صلاحیت اس میں موجود تھی۔ بے شک وہ مکار عورت تھی مگر یہ کہنے میں کوئی عار نہیں کہ وہ ایک ذہین عورت تھی۔ اس کو حورم کا خطاب اس لئے دیا گیا کہ وہ بہت لہک لہک کے گاتی تھی اور گاتے وقت وہ شمع کے پاس اپنے ہاتھ لے جاتی اور ایسے نچاتی کہ دیواروں پر دیو رقص کرتے محسوس ہوتے۔ جب وہ کنیز تھی تو پارچہ جات کی داروغہ سے اکثر سزا پاتی۔ مگر حرم کے قانون کے مطابق جب وہ سلطان کی منظور نظر بن گئی تو اس کے لیے آسائشیں مہیا کی گئیں اب داروغہ کی مجال نہ تھی کہ اسے کچھ کہه سکتی۔
اس نے حرم میں داخل هوتے ہی آہستہ آہستہ سلطان کے دل و دماغ پر قبضہ کرلیا۔ اس کے اندر انسانی نفسیات سمجھنے کی قدرتی صلاحیت تھی۔ وہ سلطان کے جذبات پر حاوی هوتی جارہی تھی ۔ سلطان کے دماغ کو اس ذہین اور طباع روسی لڑکی کی رفاقت کی ضرورت تھی۔ وہ چالاک عورت ہمیشہ سلطان سے الگ انداز میں
ملتی کہ سلطان اس سے اکتاتا نہ تھا۔
ماں بننے کے بعد حورم کا عہدہ بڑھ گیا۔ اس نے اپنے قدم حرم میں اس طرح جمانے شروع کر دیے کہ اگر شاذونادر ہی سلطان کے نظر کسی لڑکی پر پڑ جاتی تو وه بڑی ہوشیاری سے اسے اپنی کنیز بنا لیتی.وه شہزادہ محمد، مہر ماہ سلطان، شہزادہ عبداللہ، سلیم دوم، شہزادہ بایزید اور شہزادہ جہانگیر کی والدہ تھی.
اس نے سلطان کو جتانا شروع کر دیا کہ اسکی حیثیت ایک کنیز کی سی ہے ۔ محل میں خاموشی سے نکاح هوا، اس طرح اس کی حیثیت بیوی اور ملکہ کی ہوگئی۔ اس نے آہستہ آہستہ حرم پر قبضہ کرلیا۔ سلطان کے بڑے بیٹے مصطفیٰ جو اس کا ولی عہد بھی تھا اس کو قتل کروادیا، اس کے بہنوئی ابراہیم پاشا کو جو اس کا وزیر تھا اور ذہین اور بہادر تھا ، کو مروادیا اور اپنے داماد رستم کو وزیر بنوادیا۔

1294_25182028
وہ سلطنت عثمانیہ کی تاریخ میں سب سے طاقتور خواتین میں سے ایک تھی اور سلطنت خواتین کے طور پر جانے جانے والے دور کی ایک ممتاز شخصیت تھی۔ اس نے کے ذریعے شوہر کے ذریعے سلطنت عثمانیہ میں اقتدار کی طاقت حاصل کی اور سیاست میں متاثر کن کردار نبھایا۔
اس نے اپنے سازشی دماغ سے سلطنت عثمانیہ کا قلعہ درہم برہم کردیا۔ ان سب باتوں کے باوجود اگر وہ اپنی صلاحیتوں کو مثبت انداز میں استعمال کرتی تو دنیا اسے اچھے الفاظ میں یاد کرتی۔

حورم سلطان Reviewed by on . شاہِ سلیمان جس کی سلطنت تین براعظموں پر پھیلی هوئي تھی اس کے دل اور دماغ پر ایک روسی کنیز روکسے لانا کا قبضہ تھا جس کو بعد میں دنیا حورم سلطان کے نام سے یاد کرت شاہِ سلیمان جس کی سلطنت تین براعظموں پر پھیلی هوئي تھی اس کے دل اور دماغ پر ایک روسی کنیز روکسے لانا کا قبضہ تھا جس کو بعد میں دنیا حورم سلطان کے نام سے یاد کرت Rating:
scroll to top