بدھ , 18 اکتوبر 2017

Home » مشہور شخصیات » دنیا کے غریب ترین سربراہانِ مملکت جو اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں:

دنیا کے غریب ترین سربراہانِ مملکت جو اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں:

سربراہانِ مملکت عام طور پر اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں مگر اِن میں سے کچھ ایسے بھی ہیں جنہوں نے موجودہ دنیا میں اپنے فقیرانہ مزاج اور مال و دولت سے بے رغبتی کی بناء پر شہرت حاصل کی ہے۔
بوروت پاہور، سلووینیا:
2008 میں سلووینیا کے وزیرِاعظم بننے والے ’’بوروت پاہور‘‘ کو فروری 2012 میں معاشی بحران کے باعث یہ عہدہ چھوڑنا پڑا لیکن چند ماہ بعد ہی انہوں نے سلووینیا کے صدارتی انتخابات میں حصہ لیا اور اپنے حریف کو نمایاں فرق سے شکست دی۔ ان کے اثاثوں کی مالیت 44,280 ڈالر ہے۔
فریڈریکو فرانکو، پیراگوئے:
پیشے کے اعتبار سے یہ ایک سرجن ہیں اور انہوں نے 2012 سے لے کر 2013 تک ایک قلیل مدت کے لیے پیراگوئے کے صدر کی ذمہ داریاں نبھائیں۔ ان کے اثاثے 40,000 ڈالر کے ہیں۔
ژی جنپنگ، چین:
عوامی جمہوریہ چین کے موجودہ صدر وہاں کی کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سیکریٹری اور سینٹرل ملٹری کمیشن کے چیرمین بھی ہیں۔ ان کے اثاثوں کی مالیت 39,720 ڈالر ہے۔
الیکساندر لیوکاشنکو، بیلاروس:
گزشتہ 22 سال سے بیلاروس کے صدر ہونے کے باوجود لیوکاشنکو کے اثاثوں کی مالیت صرف 33,873 ڈالر ہے۔
پرناب کمار مکھرجی، بھارت:
بھارت کے صدر پرناب مکھرجی گزشتہ 40 سال سے سیاست میں ہیں اور 2012 سے بھارت کے صدر بھی ہیں۔ ان کے اثاثے 32,216 ڈالر مالیت کے ہیں۔
مارین ریکوف نکولوف، بلغاریہ:
انہوں نے 2013 میں ایک قلیل مدت کے لیے بلغاریہ کے نگراں وزیراعظم کے طور پر ذمہ داریاں سنبھالیں۔ ان کے اثاثوں کی مالیت 26,929 ڈالر ہے۔
رابرٹ موگابے، زمبابوے:
1987 سے زمبابوے کے صدر کے عہدے پر فائز رہنے والے رابرٹ موگابے کا شمار بھی دنیا کے غریب ترین سربراہانِ مملکت میں ہوتا ہے کیونکہ ان کے اثاثوں کی مالیت صرف 18,000 ڈالر ہے۔
حامد کرزئی، افغانستان:
حامد کرزئی نے 2004 سے 2014 تک افغانستان کے صدر کا عہدہ سنبھالے رکھا۔ بتایا جاتا ہے کہ ان کے اثاثوں کی مالیت صرف 6,300 ڈالر ہے جو بہت حیرت انگیز ہے۔
محمود احمدی نژاد، ایران:
2005 سے 2013 تک ایران کے صدر رہنے والے محمود احمدی نژاد اپنی صاف گوئی کے علاوہ سادہ مزاجی کے لیے بھی مشہور ہیں۔ ان کے اثاثے صرف 3,000 ڈالر کے مساوی ہیں۔ اس اعتبار سے وہ سیاسی بنیادیں رکھنے والے سب سے غریب سربراہِ مملکت بھی ہیں۔
پوپ فرانسس، ویٹیکن:
ہسپانوی نژاد پوپ فرانسس کا اصل نام ’’جورگے ماریو برگوگلیو‘‘ ہے اور وہ 2013 سے پوپ کے عہدے پر فائز ہیں۔ یعنی اس وقت عیسائیوں میں رومن کیتھولک فرقے کے سب سے بڑے روحانی پیشوا ہیں۔ یہی بات انہیں ویٹیکن کا سربراہ بھی بناتی ہے۔ ان کے اثاثوں کی مالیت کچھ بھی نہیں کیونکہ پوپ/ ویٹیکن کا سربراہ، دنیاوی مال و دولت بالکل بھی جمع نہیں کرسکتا۔

دنیا کے غریب ترین سربراہانِ مملکت جو اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں: Reviewed by on . سربراہانِ مملکت عام طور پر اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں مگر اِن میں سے کچھ ایسے بھی ہیں جنہوں نے موجودہ دنیا میں اپنے فقیرانہ مزاج اور سربراہانِ مملکت عام طور پر اپنی شان و شوکت اور ٹھاٹھ باٹ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں مگر اِن میں سے کچھ ایسے بھی ہیں جنہوں نے موجودہ دنیا میں اپنے فقیرانہ مزاج اور Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top