جمعہ , 20 اکتوبر 2017

Home » دنیا بھر سے » سلوانیہ وسطی یورپ کا چھوٹا ملک

سلوانیہ وسطی یورپ کا چھوٹا ملک

تاریخ: سلاوک قبائل سے تعلق رکھنے والے سلووین لوگ چھٹی صدی میں اس علاقے میں آباد ہوئے ۔ ساتویں صدی میں انہوں نے سلاوک ریاست ’’سامو‘‘کی بنیاد رکھی ۔ اس ریاست کا اتحاد ہنگریائی میدانوں کے غالب قبیلے ’’ایوارز‘‘ سے تھا جن کو آٹھویں صد ی کے اواخر میں شارلمین نے شکست سے دوچار کیا۔ 1867ء میں سلوانیہ آسٹرو ہنگری سلطنت کی شکست کے بعد سلوانیہ نے آذادی کا اعلان کر دیا ۔ 1918ء میں سلوانیہ نے سربیا ، مونٹی نیگرو اور کروشیا کے ساتھ شمولیت اختیار کر کے ایک نئی سلطنت یوگو سلاویہ تشکیل دی ۔
1991ء میں سلوانیہ نے یوگو سلاویہ سے علیحدگی اختیار کر کے اپنی آذادی کا اعلان کر دیا۔ 2004ء میں سلوانیہ نے نیٹو اور یورپی یونین میں شمولیت اختیار کی۔

جغرافیہ (محل وقوع):

وسطی یورپ میں آسڑیا اور کروشیاکے درمیان واقع اس ملک کے مشرقی ایلپس کے علاقے کی حدود بحیرہ ایڈریاٹک سے ملتی ہیں۔ سلوانیہ کا رقبہ 20273مربع کلومیٹر ہے۔

سلوانیہ ملک کا تعارف

سلوانیہ ملک کا جھنڈا اٹھائے ہوئے طالبعلم

سطح: ایڈریاٹک کے ساتھ مختصر ساحلی پٹی، اٹلی اور آسڑیا سے ملحق ایلپائن کا علاقہ، مشرق میں دریاؤں کے ساتھ مختلف وادیاں۔
سلوانیہ کے قدرتی زرائع: لگنائیٹ ، کوئلہ، لیڈ،زنک، مرکری ، یورینیم ، چاندی ، ہائیڈرو پاور اور جنگلات۔
حکومت و سیاست: سلوانیہ کے دارلحکومت کا نام ، ایل جبلجاناہے۔

سلوانیہ وسطی یورپ کا چھوٹا ملک Reviewed by on . تاریخ: سلاوک قبائل سے تعلق رکھنے والے سلووین لوگ چھٹی صدی میں اس علاقے میں آباد ہوئے ۔ ساتویں صدی میں انہوں نے سلاوک ریاست ’’سامو‘‘کی بنیاد رکھی ۔ اس ریاست کا ا تاریخ: سلاوک قبائل سے تعلق رکھنے والے سلووین لوگ چھٹی صدی میں اس علاقے میں آباد ہوئے ۔ ساتویں صدی میں انہوں نے سلاوک ریاست ’’سامو‘‘کی بنیاد رکھی ۔ اس ریاست کا ا Rating:
scroll to top