جمعرات , 27 جولائی 2017

Home » اضافی » قراقرم کا تاج محل

قراقرم کا تاج محل

اردو ادب میں اب تک زیادہ تر ناول اور سفرناموں کا رحجان ہے۔ مگر یہ ناول اپنے طرز کا ایک انوکھا ناول ھے کیوں کہ اس میں آپ کہانی کا لطف لینے کے ساتھ ساتھ سوات کی حسین وادیوں کی سیر بهی کرتے ہے۔ اس ناول کی کہانی سچے واقعات پر مبنی ہے۔
نمرہ احمد ہمیشہ انوکھے موضوع کا انتخاب کرتی هے ۔ یہ ناول آپ کو حقیقت میں پریوں کی کہانی میں لے جائے گا۔ کچھ دیر کے لیے آپ سب بھول کے کہانی کی بھول بھلیوں میں کھوجائے گے۔
کہانی ایک لڑکی پریشے کے گرد گھومتی ہے۔ پریشے ایک ڈاکٹر ہونے کے ساتھ ساتھ ایک کوہِ پیما بھی ہے. وہ ایک مشکل پسند لڑکی هونے کے ساتھ ساتھ خوابوں پر یقیں رکهتی ہے اسے پہاڑوں سے عشق ہےاور وہ ہمیشہ ایک شہزاده کا خواب دیکھتی ہیں مگر حالات کے وجہ سے اس کی منگنی اس کے پھپھی زاد سے هوجاتی ہے ۔ کہانی وہاں پلٹتی ہے جب اسے اپنے خوابوں کا شہزادہ مل جاتا ہے ۔ وہ ایک ترک سیاح اور کوه پیما افق ارسلان ہوتا ہے۔
اس کے ساتھ وہ سوات کی وادیوں کی سیاحت کرتی ہے اور دوبارہ راکاپوشی پر ملتی ہیں۔ راکاپوشی ہی دراصل قراقرم کا تاج محل ہے۔ جس کو اس کی سفید برف کی وجه سے تاج محل سے مشابہت دی ہوئی ہے۔
راکاپوشی پر جا کے انہیں بھت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور افق پریشے سے بچھڑ جاتا ہے وه اس سے دوبارہ ملتا ہے یا نهیں یه آپ کو ناول پڑھنے کے بعد پتہ چلے گا۔
اس ناول کو پڑھتے هوئے ایسا محسوس هوتا ھے جیسے ہم ایک انگلش ایڈوینچر فلم دیکھ رہے ہیں۔ کہانی کے اتار چڑھائو ، سوات کی وادیاں اور قراقرم کا تاج محل اس کی خصوصیات ہیں۔ کہانی کی منظر کشی بڑے خوب صورت انداز سے کی ہوئی ہے۔ اور آپ ان سب جگہوں کی سیر مرکزی کرداروں کے ساتھ کرتے ہوئے محسوس کریں گے۔
سوات کی وادیوں سے قراقرم کے پہاڑوں تک ہر چیز کی تفصیل ایسے هوگی جیسے آپ اپنی آنکھوں سے نظارے کر رہے ہیں ۔ بے شک قراقرم کا تاج محل اردو ادب میں ایک بے حد خوبصورت اضافہ ہے۔

قراقرم کا تاج محل Reviewed by on . اردو ادب میں اب تک زیادہ تر ناول اور سفرناموں کا رحجان ہے۔ مگر یہ ناول اپنے طرز کا ایک انوکھا ناول ھے کیوں کہ اس میں آپ کہانی کا لطف لینے کے ساتھ ساتھ سوات کی ح اردو ادب میں اب تک زیادہ تر ناول اور سفرناموں کا رحجان ہے۔ مگر یہ ناول اپنے طرز کا ایک انوکھا ناول ھے کیوں کہ اس میں آپ کہانی کا لطف لینے کے ساتھ ساتھ سوات کی ح Rating:
scroll to top