جمعہ , 20 اکتوبر 2017

Home » اہم » پاکستان تعلیم کے شعبہ میں کہاں کھڑا ہے:

پاکستان تعلیم کے شعبہ میں کہاں کھڑا ہے:

خبر پریشان کن بھی ہے اور باعث ندامت بھی۔ ایک تحقیقی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دنیا کی بہترین ۰۰۴ جامعات میں پاکستان کی کوئی بھی یونیورسٹی شامل نہیں، اس وقت امریکہ میں ۵ ہزار ۸۵۷ یونیورسٹیز ہیں، بھارت میں یونیورسٹیز کی تعداد مجموعی طور پر ۳۸۵ ہے جو کہ۶۵ کے لگ بھگ اسلامی ممالک کی کل ۰۸۵ یو نیورسٹیز سے کہیں زیادہ ہے۔ پاکستان میں ۸۲۱ جامعات تعلیمی میدان میں خدمات سرانجام دے رہی ہیں۔ دنیا کی ۰۰۴ بہترین جامعات میں اسلامی ممالک میں سے سعودی عرب کی صرف ایک یونیورسٹی شامل ہے، امریکہ کی ۶ جبکہ بھارت کی ۲ یونیورسٹیز اس فہرست میں شامل ہوسکی ہیں۔ امریکی جریدے ”یو ایس نیوز اینڈ ورلڈ رپورٹ“ نے یہ درجہ بندی تعلیم اورکیریئر پر تحقیق کرنے والے ایک بین الاقوامی ادارے سے کروائی ہے، جس میں دنیا میں یونیورسٹیز کی علمی ساکھ، عملے کی ساکھ، فیکلٹی اور طلبا کا تناسب انٹرنیشنل فیکلٹی اور دیگر معاملات کو میرٹ بنایا گیا ہے۔مذہبی تعلیمات، تاریخ دانوں، روایات اور دانشوروں کی رائے یہی ہے کہ کسی قوم کی ترقی، خوشحالی اور عروج کے لئے خدا تعالیٰ کے کچھ اصول ہیں، جو اقوام یا افراد ان اصولوں پر عمل پیرا ہوتے ہیں، وہ کامرانی کی منازل کو ضرور پاتے ہیں، خدا تعالیٰ کے اصولوں پر اگر غیر مسلم عمل کریں گے تو کامیاب قرار پائیں گے اور اگر مسلمان ان اصولوں کو نظر انداز کردیں گے تو وہ بھی نظرانداز کردیئے جائیں گے، ہم لوگ اس اصول کا عملی مظاہرہ دیکھ بھی رہے ہیں، سبق حاصل کرنے کی توفیق پھر بھی نہیں ہوتی۔ بد قسمتی سے مسلمان ممالک کے حکمرانوں کی ترجیح علم کی بجائے مال ہے، دنیاوی عیاشیاں ، محلات اور اسی قسم کے دیگر معاملات ہی ان کے معمولات ہیں، وہ یونیورسٹی کی بجائے ایک پرتعیش محل کو ترجیح دیتے ہیں۔ مسلم امت کا حال سامنے ہے۔ ایشیا کی یونیورسٹیز میں چین، جنوبی کوریا اور بھارت اپنی یونیورسٹیز میں ملکی اور غیرملکی طلبا پر سب سے زیادہ سرمایہ کاری کرنے والے بالترتیب تین ممالک ہیں۔ہمیں تعلیمی میدان میں اپننی خوبیاں اہر کرنے کی ضرورت ہے، آج جب ہم اپنی ۴۶ سالہ تاریخ کا ماضی کھنگالنے کی کوشش کررہے ہیں تو ہمیں سال بہ سال اپنا معیاری تعلیم تیزی سے زوال کی جانب جاتا ہوا ہی دکھائی دے رہاہے اور ہم کفِ افسوس کے اور کچھ نہ کرپارہے ہیں اور آج جب ہم نے اِس حوالے سے اپنا موازنہ اپنے پڑوسی ملک بھارت سے کیا تو ہمیں اپنا وجود زمین میں دھنستا ہواہی محسوس ہوا اور ہم خود کو ایک جاہل قوم کا فرد تصور کئے بغیر نہ رہ سکے اور دوسری جانب جب ہم نے ا±متِ مسلمہ کے (ماضی سے ہٹ کر) آج کے معیارے تعلیم کا موزانہ یورپی ممالک سے کیاتو ہمیں اِس بات کا شدت سے احساس ہواکہ ایک ہم پاکستانی ہی نہیں بلکہ ساری مسلم ا±مہ ہی تعلیم کے میدان میں یورپی اور دیگر ادیان کے مقابلے میں بہت پیچھے ہے۔

پاکستان تعلیم کے شعبہ میں کہاں کھڑا ہے: Reviewed by on . خبر پریشان کن بھی ہے اور باعث ندامت بھی۔ ایک تحقیقی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دنیا کی بہترین ۰۰۴ جامعات میں پاکستان کی کوئی بھی یونیورسٹی شامل نہیں، اس وقت امری خبر پریشان کن بھی ہے اور باعث ندامت بھی۔ ایک تحقیقی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دنیا کی بہترین ۰۰۴ جامعات میں پاکستان کی کوئی بھی یونیورسٹی شامل نہیں، اس وقت امری Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top