پیر , 24 جولائی 2017

Home » اہم » پاکستان کی سیاسی جماعت متحدہ قومی موومنٹ کا مستقبل:

پاکستان کی سیاسی جماعت متحدہ قومی موومنٹ کا مستقبل:

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی سے پروان چڑنے والی ایم کیو ایم کی بنیاد کراچی میں سنہ 1978ء میں ایک طالبعلم رہنما الطاف حسین نے رکھی۔ ایم کیو ایم کے قیام سے قبل الطاف حسین کی قیادت میں جامعہ کراچی میں آل پاکستان مہاجر اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کی بنیاد رکھی جس نے آگے چل کر انہیں ایم کیو ایم کے قیام کی تحریک دی۔ اس کے قیام کا ایک اہم مقصد جامعہ کراچی میں زیر تعلیم اردو بولنے والے طالب علموں کے مفادات کا تحفظ تھا۔ بعد ازاں اس تنظیم نے اپنے دائرے کو وسعت دے کر اسے صوبہ سندھ کی سیاسی جماعت کا درجہ دے دیا۔ متحدہ قومی موومنٹ کے بانی اور قائد الطاف حسین نے 1992ء کے فوجی آپریشن سے قبل ہی خود ساختہ جلاوطنی اختیار کر کے لندن میں سکونت اختیار کر لی تھی اور اب ان کے پاس برطانیہ کی شہریت ہے۔لیکن پچھلے کچھ برسوں میں متحدہ قومی موومنٹ کے اہم اراکین نے اس پارٹی کو خیرآباد کہہ دیا اور دوسری سیاسی جماعت کے ساتھ شامل ہو گئے یا پھر اپنی الگ سیاسی جماعت بنا لی۔عامر خان،عمران فارق وغیرہ تو پہلے ہی پارٹی کو خیرآباد کہہ چکے تھے مگر کچھ ماہ قبل ایم کیو ایم کے کارکن اور سابق سٹی ناظم مصطفی کمال نے وطن واپس آ کر اپنی الگ سیاسی جماعت پاک سرزمین پارٹی بنانے کا کیا اعلان کیا ایم کیو ایم سے ناراض اراکین پارٹی چھوڑ کا پاک سرزمین پارٹی میں شامل ہو گئے۔متحدہ قومی موومنٹ کے ان حالات کی سب سے بڑی وجہ متحدہ قائد کی اشتعال انگیر تقاریر، عوام کو انتشار پھیلانے کی ترغیب دینا ہے۔ اسکا سب سے بڑا ثبوت حال ہی میں ہونے والی متحدہ قائد کی وہ تقریر جس میں انہوں نے پاکستان کے خلاف نعرے بازی اور میڈیا پر حملہ کرنے کی ترغیب دی۔
متحدہ قائد کی اس تقریر پر عوام نے غم و غصہ کا اظہار کیا اور پاکستان زندہ باد اور الطاف حسین مردہ باد ک نعرے لگائے۔کہانی کا نیا رخ اس وقت بدلا جب متحدہ قومی موومنٹ کے ڈپٹی کنوینر فاروق ستار نے پریس کانفرنس میں آ کر متحدہ قائد سے لاتعلقی کا اعلان کردیا۔انکا مزید یہ کہنا تھا کہ جب متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کی جماعت ہے تو اس کا انتظام بھی پاکستان سے چلنا چاہیے۔اگر ذہنی تناؤ یا کسی بھی وجہ سے جماعت کے قائد الطاف حسین ’پاکستان مخالف‘ بیانات دے رہے ہیں تو پہلے یہ معاملہ حل ہونا چاہیے۔ اب ان تمام عوامل کا جائزہ لینے کے بعد ہم ایم کیو ایم کا سیاسی مستقبل تاریکی میں دیکھ رہے ہیں۔١٩٧٨میں پارٹی کی بنیاد رکھنے والے خود الطاف حسین کی جماعت تین دھڑوں میں تقسیم ہو چکی ہے۔اور خود الطاف حسین اپنی غیرر ذمہ درانہ تقاریر اور غیر مستقل مزاجی کی بدولت عوام میں غیر مقبول تھے ہی اب پارٹی عہدیداروں کی بے وفائی کے بعد ایم کیو ایم اور الطاف حسین کا سیاسی کیرئیر کس کروٹ بیٹھتا ہے یہ تو وقت ہی بتائے گا۔

پاکستان کی سیاسی جماعت متحدہ قومی موومنٹ کا مستقبل: Reviewed by on . پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی سے پروان چڑنے والی ایم کیو ایم کی بنیاد کراچی میں سنہ 1978ء میں ایک طالبعلم رہنما الطاف حسین نے رکھی۔ ایم کیو ایم کے قیام سے قبل پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی سے پروان چڑنے والی ایم کیو ایم کی بنیاد کراچی میں سنہ 1978ء میں ایک طالبعلم رہنما الطاف حسین نے رکھی۔ ایم کیو ایم کے قیام سے قبل Rating: 0

Leave a Comment

scroll to top