پیر , 23 اکتوبر 2017

Home » تاریخ کے جھروکے سے » چین میں اسلام

چین میں اسلام

چین میں عام مذہب بدھ پرستوں کا ہے۔ مگر چین میں اقلیت میں ہی سہی مسلمان رہتے ہیں۔ مختلف ذرائع چین میں مسلمانوں کی مختلف تعداد کا اندازہ کرتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق چین کی کل آبادی کا ۲ فیصد مسلمان ہے۔ جو کہ چین کے ہر شہر میں پائے جاتے ہیں۔ چین کے مسلمان کوئی اجنبی طرز کی مخلوق نہیں ہیں۔ بلکہ وہ لوگ اپنے ملک سے بے حد پیار کرتے ہیں اور چینی معاشرے کے ساتھ مسلسل تعلق میں ہیں۔ ا ور چین کے ذمہ دار اور پر امن شہری ہے۔

images
تاریخ
چین میں اسلام پچھلے۱۴۰۰ سالوں سے ہیں ۔ یعنی نبی پاکؐ کے زمانے سے چین اسلام سے روشناس ہوگیا تھا۔ خلیفہ سوم حضرت عثمان کے زمانے میں ایک صحابہ سعد بن ابی وقاضؓ یہاں اسلام کا پیغام لے کر آئیں تھے۔ یہ ۶۵۰ بعد از مسیح کا زمانہ تھا۔ گیوزونگ کے بادشاہ، شهنشاه تنگ نے اسلام قبول کیا اور کینٹن میں میموریل مسجد بنانے کا حکم دیا جو اس ملک کی پہلی مسجد تهی۔ ہوائیشینگ مسجد دنیا کی قدیم ترین مساجد میں سے ایک ہے
کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ سعد بن ابی وقاص ؓ بذات خود نہیں آئے تھے بلکہ اسلام یہاں مسلمان تاجروں کے ذریعے پھیلا تھا۔
سنگ کے دور میں مسلمانوں اور چینیوں کے درمیان تجارت زور وشور پر تھی. چین میں اسلام کی آنے کی ایک وجہ یہ بھی کہی جاتی ہے۔ بادشاہ شیہزونگ نے اس وقت میں امن کے خیال سے بخارا سے ۵۳۰۰ مسلمانوں کو بلا کر آباد کیا اور اس کے شہزادے نے اسلام قبول کر اے اپنا نام شہزاہ عامر سید رکھا اسے چین کے مسلمان " چین میں مسلمانوں کا باپ " کے طور پر جانتے ہیں۔
چنگیز خان کے زمانے میں مسلمانوں پر بہت مشکل دور آیا تھا ۔ جانور حلال کر کے ذبح کرنا ان کے لیے ممنوع ہوگیا تها کچه مسلمان چھپ کر بھیڑوں کو حلال کرتے۔ یہودی اور مسلمانوں کو چنگیز خان غلام کہتا تھا۔ پھر ایک مسلمان جنرل ہان چائےنیز منگولوں کے خلاف چلے گئے ۔ اور مسلمانوں کو آزاد کروایا.

چین میں اسلام Reviewed by on . چین میں عام مذہب بدھ پرستوں کا ہے۔ مگر چین میں اقلیت میں ہی سہی مسلمان رہتے ہیں۔ مختلف ذرائع چین میں مسلمانوں کی مختلف تعداد کا اندازہ کرتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق چین میں عام مذہب بدھ پرستوں کا ہے۔ مگر چین میں اقلیت میں ہی سہی مسلمان رہتے ہیں۔ مختلف ذرائع چین میں مسلمانوں کی مختلف تعداد کا اندازہ کرتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق Rating: 0
scroll to top